شائد آئیندہ کا مورخ جب اس ملک کی موجودہ تاریخ لکھے گا تو اس میں عدالت پر بیٹھے کچھ صاحب اقتدار کے فیصلوں کو کسی طرح سے عقل و دانش کی کسوٹی پر پورا اترتا ہوا نہیں پائے گا بلکہ کراچی کے معاملے میں کچھ فیصلوں کو بدلے کی آگ میں جھلسہ ہوا فیصلہ لکھے گا۔

Two Paragraph from Supreme court Verdict on SUO MUTO notice on Law and order situation in Karachi

Paragraph-92:

جہاں تک ۔  25لاکھ غیرپاکستانیوں کا تعلق ہے یہ بات ذیادہ پریشان کن ہے کہ یہ لوگ ٹارگیٹ کلنگ جیسے گھناونے جرائم میں ملوث ہیں۔  اس کیس کے ایک پہلو سے یہ بات نکل کر سامنے آئی ہے کہ ان کی موجودگی نہ صرف یہ کہ جرائم میں اضافے کا باعث ہے بلکہ ریجسٹریشن نہ ہونے کہ باعث یہ لوگ ہمارے قومی خزانے پر بوجھ ہیں اور اس کے علاوہ یہ بہت سارے ایڈمنسٹریٹو مسائل کا باعت بھی ہیں، مثلا” قومی شناختی کارڈ کا حصول بھی۔ اگر ان لوگوں نے اپنے آپ کو اس ملک کا شہری کہلوانے کا حق حاصل کرلیا ہے، اور ساتھ ہی ساتھ الیکشن لسٹ میں اپنا اندراج بھی کروالیا ہے تو یہ بات حقیقی ووٹر کو ان کے حق کہ وہ اپنی مرضی کا نمائندہ چنیں کی حق تلفی ہوگی۔ اس کے علاوہ ان کی موجودگی سے علاقوں میں موجود افراد کی تعداد بھی ایک حد سے ذیادہ بڑھ گئی ہے۔ اس کے نتیجے میں قومی اور صوبائی اسمبلیوں کی حلقہ بندیاں بھی متاثر ہوئی ہیں۔ لہذا حکومت کو اس طرف توجہ دینا چاہیے۔ نادرہ اور پولیس کو اس طرف توجہ دینی چاہیے تاکہ کراچی کو ان غیر ملکیوں سے پاک کیا جاے۔ نادرا کو ایک بلکل علیحدہ ریکارڈ بنانا چاہیے۔ نادرا کو ایسے لوگوں شناختی کارڈ بلاک کرنا چاہیے اور پولیس کو ان لوگوں کی شناخت کے لیے ایک مہم شروع کرنی چاہیے۔ پولیس اور نادرا کو اس کے لیے ایک بلکل علیحدہ ٹیم بنانی چاہیے تاکہ یہ معاملہ آئیندہ ایک سال میں حل ہو جائے۔ تاکہ قانون اپنا راستہ خود متعین کرے اور اس معاملے کو فوقیت دی جانی چاہیے۔

As far as the question of presence of 2.5 million aliens in Karachi is concerned, it is more alarming compared to the activities of the criminals involved in heinous crimes, like target killing, etc. This aspect of the case would reveal that the presence of such persons is not only a factor for increase in crime, but at the same time without proper registration, they are a burden on the national economy, inasmuch as their presence can give rise to so many other administrative problems, including obtaining of National Identity Cards by them. If they have succeeded in this venture and claim themselves to be citizens of Pakistan and have also succeeded in registering their names in the electoral list, it would be tantamount to depriving the actual electorate from choosing their representatives, inasmuch as due to their presence, areas have expanded considerably, which directly affects the delimitation of the constituencies meant for holding elections of the Provincial Assembly and the National Assembly, therefore, the Government should take immediate action against them in accordance with law, namely, the Foreigners Act. NADRA and the Police must undertake a careful cleansing process of such people and NADRA must have separate records and computer files based on proper and cogent evidence. NADRA and police should co-operate in Karachi through an intensive drive to identify foreigners, block their NIC cards after due process of law and special teams should be appointed and dedicated for this job by DG NADRA and IGP so that this can be completed in the course of next one year or so. Then the law must take it own course in each case. This must be given high priority.

Page 152:

مذید مشاہدہ کیا گیا کہ سیاسی پولرائزیشن اور لسانی جھگڑوں اور علاقے پر قبضے کی لڑائیوں پر قابو پانے کے لیے پولیس اسٹیشنز کے حدود و ریونیو کے حدود کو تبدیل کیا جاسکتا ہے مختلف کمیونیٹی کے لوگ آپس میں ملکر امن اور سکون سے رہ سکیں، بجائے اس کہ جس سے ایک گروہ ایک علاقے پر اپنا دعوہ رکھے اور دسرے کیلیے اس کو نو گو ائیریا بنا دے۔ ان تمام مقاصد کو مدنظر رکھتے ہوے علاقوں کی نئی حد بندیاں کی جاسکتی ہیں۔ الیکشن کیمشن کو خود ہی اس عمل کو شروع کر سکتی ہے۔

Further observe that to avoid political polarization and to break the cycle of ethnic strife and turf war, boundaries of administrative units like police stations, revenue estates, etc., ought to be altered so that the members of different communities may live together in peace and harmony, instead of allowing various groups to claim that particular areas belong to them and declaring certain areas as NO GO Areas under their fearful influence. Subsequent thereto, on similar considerations, in view of relevant laws, delimitation of different constituencies has also to be undertaken with the same object and purpose, particularly to make Karachi, which is the hub of economic and commercial activities and also the face of Pakistan, a peaceful city in the near future. The Election Commission of Pakistan may also initiate the process on its own in this behalf;

اوپر کے دونوں مشاہدوں کو دیکھتے ہوے لگتا ہے کہ عدالت شائد کسی خاص مقصد کے تحت کراچی کے حصے بخرے کرنا چاہتی ہے۔ نہ تو پولیس نے کوئ ایسی مہم شروع کی جس سے غیر ملکیوں کو پکڑا گیا نہ ہی نادرا نے کسی ایسے غیر ملکیوں کو جن کو شناختی کارڈ جاری ہوے ہیں اُن کو بلاک کیا ہے۔ اگر سب کچھ ویسا ہی ہے جیسا کہ مشاہدہ 92 میں بتایا گیا ہے تو پھر غیر ملکیوں کے لیے یہ بات ذیادہ آسان بنانے کی کوشش کی جارہی ہے کہ وہ کراچی کے مستقل باشندوں کے ووٹ کے ذرئعے اپنا نمائندۃ چننے کے حق پر ڈاکہ ڈالا جائے۔

نئی حلقہ بندیاں اگر مشاہدہ 92 کی روح کو پورا کیے بغیر کیا جاے گا تو سپرئم کورٹ کے اپنے مشاہدے کی خلاف ورزی ہوگی اور ملک کے ساتھ دشمنی۔ کچھ  ناعاقبت اندیش اپنے ریاست ادارے کے مسند سے حاصل کی گئی قوت کو کسی خاص واقع پر اپنی سبکی کا بدلہ لینے مین اتنے آگئے چلے جا رہے ہیں کہ وہ اپنی ہی باتوں کی نفی کر رہے ہیں اور بے خوف ہیں کہ اُن کو کسی کو جواب بھی دینا ہے۔ وہ منصف بھی ہیں اور انصاف کے ترازو کو اپنی مرضی کے باٹ سے انصاف تول کر دینا چاہتے ہیں۔

جمہیوریت کے روح میں عدالت کا آداد ہونا نہیں بلکہ انصاف کا حصول آسان اور سب کے لیے ایک جیسا ہونا ضروری ہے۔ ورنہ ملک ڈکٹیٹر شپ کے عذاب سے تو دوبارہ نکل سکتا اور اس کے پہنچاے گئے نقصانات کو برداشت کر سکتا ہے مگر عدالتوں کے ذریعے لوگوں کے حق چناؤ پر ڈاکہ ڈالنے کے نتیجے میں تباہ ہوجاتے ہیں

شائد آئیندہ کا مورخ جب اس ملک کی موجودہ تاریخ لکھے گا تو اس میں عدالت پر بیٹھے کچھ صاحب اقتدار کے فیصلوں کو کسی طرح سے عقل و دانش کی کسوٹی پر پورا اترتا ہوا نہیں پائے گا بلکہ کراچی کے معاملے میں کچھ فیصلوں  کو بدلے کی آگ میں جھلسہ ہوا فیصلہ لکھے گا۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s